ایویں ایویں بھاشن

ہمیں دنیاوی علوم کے ساتھ ساتھ دینی علوم بھی سیکھنے چاہیں کہ یہ ہمارا دینی فریضہ ہے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔...
اگر دین، دنیا میں رہنےکے طریقے شریقے بتاتا ہے پھر تو ٹھیک ہے کہ انسانوں کے ساتھ معاشرت کرنے کا طریقہ سلیقہ آجائے گا۔
لیکن ۔۔اگر ،مگر چونکہ ،چنانچہ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
آلو گوبھی میں "کچھ" نظر آنا دین ہے۔ سر پہ ٹوپی اور عمامہ باندھ کر ناک کے نتھوں سے پھنکارنا ، ہر نظر آنے والے ذی روح کی "دینی" حالت پر افسوس کرکے اس کے لئے اپنی جیسی "ھدایت" کی طلب کرنا دین ہے۔۔اپنی مذہبی سوچ کو زبردستی دوسرے پر مسلط کرنا ، اگر کوئی اللہ رسول کے بعد دین کا سب سے بڑا نہ سمجھے تو اسے گالیاں نکالنا ، مخالفین کیلئے ، ہر قسم کی گالی ،انہیں ہر قسم کی تکلیف دینا ،دین ہے تو
اے ایماندار ، دیندار ، فلاح کیطرف بلانے والے، سلامتی کیطرف بلانے والے!!
خدا کیلئے ۔۔۔۔۔۔۔۔ لوگوں کو سلامت رہنے دے۔ لوگوں میں سے اور لوگوں پر اپنا بغض مذہب کے نام پر مت نکال۔۔
نظریات ، عقائد ، کو دوسرے باطل اس وقت سمجھتے ہیں، اس وقت نظریات ، عقائد سے بیزار ہو جاتے ہیں۔۔
جب ان نظریات ، عقائد کے داعی ، مبلغ ، بد اخلاق ، بیہودہ ، جھگڑالو، لڑاکو۔۔معاملات کے گندے ، ہوں۔
نقصان یہ ہوتا ہے کہ ایک جیسے عقائد رکھنے والے بھی صرف اور صرف "روئیوں" کے غلط ہونے کی وجہ سے ایک دوسرے سے دور ہو جاتے ہیں، دلوں میں کدورت ، نفاق ، پیدا ہو جاتا ہے۔
ایسے روئیوں کی وجہ سے "لادین" تو کبھی بھی "متاثر" ہو کر "دینِ حق" کیطرف نہیں آئیں گے۔
دعوت کس طرح دی جائے گی؟
مذہب کے نام پر دست و گریبان ہونے والے نہیں جانتے کہ مزاجوں کی جارحیت ،شدت پسندی ہی تو عقائد ، نظریات، کو دوسروں کی نظروں میں "حقیر" کر دیتی ہے۔۔
چاھئے مذہب الہامی ہو اور جس کی حقانیت پر کوئی شک و شبہ بھی نہ ہو۔۔
لیکن،۔۔۔۔۔
اس کے ماننے والوں کا روئیہ ، انداز ، اسے لوگوں کیلئے ناقابل قبول بنا دیتا ہے۔۔
دینی اور دنیاوی علوم میں کوئی فرق نہیں ہے، دین بھی اللہ کی بندگی کرکے اللہ کے بندوں کے ساتھ معاشرت سکھانے کیلئے ہی آسمان سے اتارا گیا ہے۔۔
باقی دنیاوی علوم تو روٹی شوٹی کمانے کیلئے سیکھے جانے والا "پیشہ " ہی تو ہے۔۔۔
ایویں ایویں بھاشن ایویں ایویں بھاشن Reviewed by یاسر خوامخواہ جاپانی on 12:08 PM Rating: 5

1 تبصرہ:

عادل کہا...

اللہ آپ کو خوش رکھے۔ ایمان بھری زندگی دے اور ایمان پر خاتمہ کرے۔

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.