طریقہ واردات اور بغیر ثبوت سنگین الزامات۔ میلہ درویش6

الحمد اللہ ہم مسلمان ہیں۔
ہمارا عقیدہ ہے کہ محمد ﷺ اللہ کے آخری نبی اور رسول ہیں۔ ان کے بعد نہ ہی نبی آیا ہے اور نہ آئے گا۔ محمد ﷺ کے بعد جس نے بھی نبوت کا دعوی کیا وہ جھوٹا ہے۔ہم خود قادیانی نظریات کی مزمت کرتے ہیں۔
المیہ تو یہ ہے کہ جس بندے فاروق درویش کا مطالعہ نہ ہونے کے برابر ہے اور جسے بات کرنے کا ڈھنگ نہیں آتا اور جو ایک حساب سے ذہنی مریض ہے۔ وہ اپنی گالیوں کی پٹاری کھولے مداری لگائے اور خود کو مجاہد تحریک ختم نبوت سمجھے بیٹھا ہے۔
فاروق درویش کو لیڈر بننے اور تبلیغ کا شوق ہے۔ یہ علمی دلائل اور قرآن و حدیث کے حوالوں سے قادیانیوں کی مزمت کرنے کی بجائے ہر کسی کو گالیاں ہی دیتا رہتا ہے۔!!!!
کئی مسلمانوں نے فاروق درویش کو سمجھانے کی کوشش کی کہ یہ طریقہ درست نہیں۔ اس طرح مذہب اور مسلمانوں کا غلط تاثر پیش ہو رہا ہے اور قادیانی جگہ جگہ یہی کہتے پھر رہے ہیں کہ دیکھو خود کو مسلمان کہنے والوں کے پاس دلائل نہیں۔ اسی لئے یہ صرف گالیاں دیتے ہیں۔
جب کوئی مسلمان ایسی باتیں فاروق درویش کو سمجھانے کی کوشش کرتا ہے یا کسی بھی بات سے تھوڑا سا بھی اختلاف کرتا ہے تو یہ سوچے سمجھے بغیر الٹا اس مسلمان پر چڑھائی کر دیتا ہے۔
شروع میں تھوڑے سخت الفاظ استعمال کرتا ہے۔ اب یہ اس مسلمان کی عقلمندی پر ہے کہ وہ اس کی بددماغی سمجھ کر ایک طرف ہو جاتا ہے یا مزید بحث کرتا ہے۔
عام طور پر بندہ تھوڑی بحث کرتا ہے تو فاروق درویش اپنی کسی بھی آئی ڈی سے انتہائی سخت الفاظ استعمال کرتا ہے۔جواب میں بندہ بھی تھوڑا سخت ہوتا ہے تو فاروق درویش ننگی گالیاں بکنا شروع ہو جاتا ہے
اس کے بعد فاروق درویش کی ذہنی بیماری شدت پکڑتی ہے اور اسے اپنی گالیاں تو نظر نہیں آتیں مگر دوسرے کے معمولی سے سخت الفاظ بھی پہاڑ لگنے لگتے ہیں پھر یہ نہایت بھونڈے طریقے سے دوسرے پر سنگین الزامات کی بوجھاڑ شروع کر دیتا ہے۔
اس کی ایسی حرکت پر دوسرا بھی تھوڑا بہت ردعمل دیکھاتا ہے۔ ظاہر ہے ردعمل تو ہونا ہوتا ہے۔ سیدھی سی بات ہے کہ الزامات معمولی ہوں تو پھر بھی کوئی برداشت کر جائے لیکن فاروق درویش سیدھا لوگوں کے ایمان پر حملہ کرتا ہوئے کہتا ہے کہ فلاں قادیانی نواز ہے فلاں یہودیوں کا ایجنٹ ہے فلاں غدار ہے فلاں گستاخ ہے
اس طرح الزامات اور فتووں کا نہ رکنے والا سلسلہ شروع کر دیتا ہے اور دوسرے کو بدنام کرنے کے لئے پراپیگنڈے کرنا شروع کر دیتا ہے۔
کئی ماہرین کے خیال سے فاروق درویش کو ایسی ذہنی بیماری ہے جس میں اسے اپنے سے معمولی اختلاف کرنے والا بندہ بھی اپنا دشمن لگتا ہے اور بیماری کی وجہ سے ہی یہ جو سوچتا ہے اسے وہی حقیقت لگتا ہے۔
فاروق درویش لوگوں کے سامنے خود کو سچا ثابت کرنے اوردوسرے پر لگائے گئے سنگین الزامات اور اپنی گالیوں کا دفاع اس طرح ہے
دیکھو میں قادیانیوں کے خلاف بول رہا تھا تو اس بندے نے قادیانیوں کی طرفداری کی۔ حالانکہ اس بندے نے قادیانیوں کی طرفداری نہیں کی ہوتی بلکہ فاروق درویش کے غلط طریقے کی نشان دہی کی ہوتی ہے۔
فاروق درویش مزید پراپیگنڈے کرتے ہوئے کہتا ہے
میں نے اس بندے کی مزمت کی تو اس نے مجھے اور میری بیٹی سارا غزل کو گالیاں دیں۔ فاروق درویش کو اپنی ننگی گالیاں نظر نہیں آتیں مگر دوسرے کے معمولی اختلاف کو گالیاں کہنا شروع کر دیتا ہے یعنی رائی کا پہاڑ بنا کر پیش کرتا ہے۔
اس کے بعد فاروق درویش اس بندے کو کافروں کا ہمدرد اور نا جانے کیا کیا ثابت کرنے کے لئے باقاعدہ مہم چلاتا ہے۔ مہم بھی ایسی بھونڈی ہوتی ہے کہ جس میں کوئی ثبوت نہیں ہوتا بس گالیاں دیتے ہوئے یہی کہتا ہے کہ فلاں نے مجھے روکا ہے لہذا وہ قادیانیوں کا ہمدرد اور یہودیوں کا ایجنٹ اور فلاں فلاں ہے۔
فاروق درویش کے بھونڈے پن اور ثبوت دینے کا عالم یہ ہے کہ دیکھو جی فلاں کینیڈا میں رہتا ہے اور قادیانیوں کی اکثریت بھی کینیڈا میں ہے لہذا فلاں قادیانی نواز ہے۔
فاروق نام نہاد درویش ایک چیز میں چالاکی دیکھاتا ہے۔ اپنی تحریر میں کسی کو دو ٹوک قادیانی نہیں کہتا بلکہ قادیانیوں کا ہمددر، منافق اور اس جیسے دیگر الزامات اس ترتیب سے لگاتا ہے کہ روانی میں پڑھنے والے کو وہ بندہ قادیانی معلوم ہوتا ہے پھر جاہل لوگ اس بندے کو قادیانی سمجھتے ہوئے گالیاں دینی شروع کر دیتے ہیں۔
اس پر فاروق درویش بہت خوش ہوتا ہے اور گالیاں دینے والوں کی حوصلہ افزائی کرتا ہے۔
کئی مسلمانوں کا المیہ ہے
وہ اس کی گالیوں سازشوں اور بھونڈے طریقوں کے باوجود اس کی ہاں میں ہاں ملاتے ہیں۔ فاروق درویش نے اپنے اردگرد کئی جاہلوں کو اکٹھا کر رکھا ہے۔ فاروق درویش اور اس کی جعلی آئی ڈیز اور اس کے گرد موجود لوگوں کی بات چیت اور گالیوں کے نمونوں ہماری پچھلی تحریر میں موجود ہیں۔
ادھر صرف اس کے طریقہ واردات کی چھوٹی سی مثال اسکرین شاٹ میں خود دیکھ لیں۔
جس میں ایک مسلمان کے معمولی سے اختلاف کو کیسے رائی کا پہاڑ بنا کر طوفان بدتمیزی شروع کر دیا گیا۔ چاہے اسے اس مسلمان کی غلطی کہہ لیں کہ اس نے فاروق درویش جیسے ذہنی مریض کو سمجھانے کے لئے بہتر واضح طریقہ نہ اپنایا مگر فاروق نام نہاد درویش اور اس کے جاہل ہمنواؤں کی زبان پر غور کریں۔
یہ دعوے مذہب کی خدمت اور نبی اکرمﷺ سے محبت کے کرتے ہیں اور خود اخلاقیات سے گری ہوئی زبان استعمال کرتے ہیں۔
فاروق درویش کا طریقہ واردات
فاروق درویش نے ادھر ہی معاملہ ختم نہیں کیا۔ بعد میں مولانا مودودی کے اس پیروکار کے ساتھ ساتھ بہت سارے مسلمانوں کو نشانہ بنایا اور انہیں بدنام کرنے کی مہم چلائی۔ حتٰکہ کئی مسلمانوں نے فاروق درویش سے متاثر ہونے والوں کی مسلمانی کی تصدیق کی اور تو اور ختم نبوت اکیڈمی نے بھی فاروق درویش کے الزامات کی تردید کر دی۔ یہ سب آئندہ کی اقساط میں تفصیل سے بتایا جائے گا۔
اگر کوئی فاروق درویش اور اس کے مخالف فریق میں صلاح کرانا چاہے تو بیشتر اوقات یہ کہتا ہے
میں چپ کر جاتا ہوں۔ جبکہ یہ چپ کرتا نہیں بلکہ یہ اپنی جعلی آئی ڈیز سے کمنٹس میں گالیاں جاری رکھتا ہے۔ اس پر جب دوسرا فریق جوابی کاروائی کرتا ہے تو فاروق درویش کہتا ہے
دیکھو میں چپ کر گیا تھا مگر یہ لوگ مجھے چپ رہنے نہیں دیتے۔ حالانکہ فاروق درویش چپ نہیں ہوا ہوتا۔ فاروق درویش ایسے ایسے بہانے بناتا اور بھونڈی حرکتیں کرتا ہے کہ انسانیت کا سر شرم سے جھک جاتا ہے۔
طریقہ واردات اور بغیر ثبوت سنگین الزامات۔ میلہ درویش6 طریقہ واردات اور بغیر ثبوت سنگین الزامات۔ میلہ درویش6 Reviewed by یاسر خوامخواہ جاپانی on 5:02 PM Rating: 5

4 تبصرے:

محمد سلیم کہا...

علمی تحریر۔ آپ کے مؤدب انداز نے بہت متاثر کیا۔ شکریہ
اگر آپ کچھ سکرین شاٹس مجھ سے لینا چاہیں تو؟ ان صاحب کے ایماء پر ایک آئی ڈی نے مجھے مادر پدر آزاد گالیاں دینے کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے۔

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

سلیم بھائی پھر تو ضرور شاٹس دیں۔۔ابھی بہت قسطیں چلائی جائیں ،اس شخص کو گالی دیئے بغیر اسی کا لکھا اس کے منہ پر مار دیا جائے گا

افتخار راجہ کہا...

میں ان لوگوں کو کچھ برس سے فالو کررہا ہوں، اور انکی شدت پسندی کو بھی دیکھ رہا ہوں، مادرپدر اآزاد گالیاں اور مغلظات انکا خاصہ ہے،

ڈاکٹر جوادخان صاحب کی پوسٹ پر میرا کمنٹ یہ تھا کہ اگر عزت درکار ہے توایسے لوگوں سے دور رہا جائے،
پھر جو ہوا وہ آپ لوگوں نے دیکھ لیا۔

میرا اب بھی خیال ہے کہ یہ سادہ معصوم نہین ہیں، نہ ہی بیمار، مگر یہ اپنے اس طریقہ سے ہر ایسے بندے کو ختم نبوت تحریک سے دور کررہے ہیں جو کل کو کسی بھی طرح اس میں معاونت کرسکتا ہے ہر اس بندے کو پکڑ رہے جو ان سے اختلاف کرتا ہے۔

محمد عبداللہ کہا...

جپانی انکل یو راکس تھمبس اپ (Y)

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.