ھی ھی ھا ھا ھی ھی ھاھا

سورج غروب ہونے میں کچھ دیر ہی باقی تھی۔راستہ کچھ آگے جاکر ایک طرف مڑ گیا۔تھوڑا آگے جاکر ریل کی پٹڑی تھی ۔
اور پٹڑی سے چند قدم کے فاصلے پر ایک کینوینیئس سٹور تھا۔ٹن ۔۔ٹن ۔۔ٹن کی ٹرین آنے کی اطلاعی گھنٹی کے ساتھ ہی حفاظتی بند نیچے گرنا شروع ہوئے اور میں نے پٹڑی سے پہلے اپنی گاڑی روک دی۔
سامنے  دیکھ کر سوچ ہی رہا تھا کہ فٹ پاتھ پر بچی کھچی برف کے پگلنے سے بہتا پانی دوبارہ جم کر پھسلن کا باعث بن رہا ہے۔
اس فٹ پاتھ پر چلنے والوں کو احتیاط کرنی چاھئے۔
اتنے میں  دو ضعیف افراد سٹور سے نکلے جن  کے ہاتھوں میں  "عصا" تھے۔ دونوں میاں بیوی دکھائی دے رہے تھے۔عمر میں اسی سال کے اریب قریب ہی دکھائی دے رہے تھے۔
دونوں آہستہ آہستہ احتیاط سے چل رہے تھے۔میں بھی مطمعین ہو گیا کہ یہ بزرگ تیز چل ہی نہیں سکتے اس لئے ان کے پھسل کر زخمی ہونے کے امکانات نہیں ہیں۔
اتنے میں بزرگ ضعیف خاتونہ نے اپنے "عصا" کو  اپنے پیٹ کی ٹیک سے کھڑا کیا اور جلدی جلدی اپنی "بغلوں" کی تلاشی لینا شروع ہو گئیں!۔
میں سوچ ہی رہا تھا ،کہ بیچاری ضعیفہ شاید سٹور میں کچھ بھول آئی ہیں۔
اب اتنی پھسلن والی فٹ پاتھ پر انہیں واپس جانا پڑے گا۔پٹڑی کھلی ہوتی تو میں ان کی مدد کر سکتا تھا۔
ابھی میں یہ سوچ ہی رہا تھا کہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
"ماسی" نے "عصا" بغل میں دبایا اور شووووووووووووووووووووووووووووووووووں
کرکے دُڑکی لگائی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔یہ جا وہ جا۔۔۔۔۔۔۔۔سٹور میں جا گھسیں!!!
میرے خیالوں کے عکس   میں "ووڈ پیکر" کارٹون کے قہقہوں کی آواز گھونجی!! ۔
ہی ہی ھا ھا ہی ہی ھاھا!!!
میں ہکا بکا  ہو چکے "واقعے" کو سمجھنے کی کوشش کر ہی رہا تھا کہ
پوں پاں۔۔۔۔۔۔۔ہارن کے کان پھاڑ شور کے ساتھ گرجتی آواز آئی
غیرملکی صاحب ۔۔۔۔۔۔۔پٹڑی کھل گئی اے!!  نِکلو وئی۔

ھی ھی ھا ھا ھی ھی ھاھا ھی ھی ھا ھا ھی ھی ھاھا Reviewed by یاسر خوامخواہ جاپانی on 11:38 AM Rating: 5

3 تبصرے:

افتخار راجہ کہا...

تبصرہ یہ کہ زیادہ فکر کرنے پر ہارن بج سکتے ہیں بلکہ بجتے ہیں
ہیں جی

علی کہا...

:D

Sarwat AJ کہا...

ہارن ، مائی ، برف یا ٹرین ؟

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.