زبیدہ آپا کا ٹوٹکا!

بار بار کے ذکر میں سے ایک بار کا ذکر ہے۔
میاں شیخ چلی کے حالات بہت مخدوش تھے۔بھوک و افلاس نے حواس اڑائے ہوئے تھے۔
کچھ سمجھ نہیں آرہی تھی کہ کیا کیا جائے!
ایسے میں "کسی "نے  مشورہ دیا  کہ بھائی شیخ چلی !!
"پھیرے" لگا کر انڈے بیچ لیا کرو!

شیخ چلی صاحب نے "باچھوں" سے بہتے لہاب کو صاف کیا!
ٹشو کو ایک راہ چلتے کے منہ پہ مارا!
اور
بولے  "او پائی" بیچنے کیلئے انڈے کہاں سے لاؤں؟
"پائی" نے ایک عدد ٹوکرا نذر کیا کہ جا شیخ بیچ اور کما!
"سانوں وئی دے تے آپی وئی کھا"

شیخ چلی نے ٹوکرا اٹھایا  اور ایک ایسے "گاؤں" میں چلے گئے
جہاں پر "سردی" تو بہت تھی۔
لیکن انڈے نا یاب تھے۔

شیخ چلی کو  انڈے بیچنے کی جلدی تھی۔
شیخ چلی نے  دماغ لڑایا اور نعرہ سوچ لیا!
ایک اونچے تھڑے پہ بیٹھ کر نعرہ لگایا۔

میرے انڈے لے لو!!!!
گندے ہو گئے تو یہیں پھینک جاؤں گا!!
لوگ اس اچانک نازل ہو نے والی مصیبت سے گھبرا گئے!

شیخ چلی صاحب اونچے تھڑے پر "لمبے" پے کر آرام فرمانا شروع ہو گئے!
شیخ چلی صاحب جب بھی "لمبے " پڑتے ہیں تو اپنے خیالات کی دنیا میں حسین خواب ضرور دیکھتے ہیں۔
خیالوں کی دنیا میں مگن ہو کر شیخ چلی کو  !خیال  آیا کہ انڈے بکنے کے بعد کیا کرنا ہے!

خیالوں میں ہی سہی !
انڈے چونکہ بک  جانے تھے! شیخ چلی صاحب نے "اگلی " پلاننگ شروع کردی!
شیخ چلی  نے سوچا میرے انڈے جب بک جائیں گے تو میں "امیر" ہو جاؤں گا!
(لفظ امیر کے متعلق شیخ چلی کی طرح سوچئے)
"امیر" ہو جاؤں گا تو میں ایک  "محل" بناؤں گا!
جب میرا  "شاندار" محل ہو گا تو میں ایک "حسین دوشیزہ " سے بیاہ کروں گا!
میرے بہت سارے "نوکر چاکر" ہوں گے!
جب میری " حسین دوشیزہ " بیگم میرا حکم نہیں مانے گی تو۔۔۔
تو۔۔۔۔
میں اسے "یوں" لات ماروں " گا!
"یوں" لات مارنے کے خیال کے ساتھ ہی شیخ صاحب کو تکلیف کا احساس ہوا۔
درد کے احساس کے ساتھ ہی شیخ چلی "خیالوں" کی دنیا سے واپس آگئے!!
اور کیا دیکھتے ہیں! بے خیالی میں چلائی گئی لات نے "انڈؤں کے ٹوکرے" کا "ستیاناس" کر دیا ہے۔
"اونچے تھڑے" پر بھی اور اس کے آس پاس بھی ۔۔۔"ٹوٹے ہوئے انڈوں کا "گند ہی گند" پڑا ہوا ہے۔

شیخ چلی صاحب۔۔"باچھوں" سے بہتے لہاب کو صاف کرتے ہوئے!!
بٹر بٹر اس "گند" کو دیکھ رہے  تھے۔
اور انہیں سمجھ نہیں آرہی تھی کہ اس تھڑے سے اتر کر بھاگیں کیسے!!!
بحرحال "گاؤں " کے لوگوں نے سوچا۔۔۔شیخ چلی جیسے "گند مچانے" والے کو تھڑے سے اتار کر بھگایا جائے!
باقی " انڈوں کا گند" صاف ہو ہی جائے گا!!
پیارے بچو!! یاد رکھنا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔خیالی پلاؤ پکانے سے پہلے زبیدہ آپا کا ٹوٹکا ضرور پڑھ لینا چاھئے!!
زبیدہ آپا کا ٹوٹکا! زبیدہ آپا کا ٹوٹکا! Reviewed by یاسر خوامخواہ جاپانی on 9:09 AM Rating: 5

8 تبصرے:

mani کہا...

پس ثابت یہ ہوا کہ بیگم کو لات مارنے کا سوچنا بھی عذابِ کبیرہ کا باعث بن سکتا ہے۔

شاہو کہا...

اگر اس مراسلے سے زبیدہ آپا کا نام نکال دیا جائےتو بھی یہ واقعہ مکمل ہی رہتا ہے میرے خیال میں زبیدہ آپا اس طرح کے مذاق پسند نہیں کرتیں باقی مراسلہ بروقت ہے

افتخار اجمل بھوپال کہا...

میں تو زبیدہ آپا کا ٹوٹکا پڑھنے آیا تھا ۔ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔

ali کہا...

:)
شیخ چلی بننے پر کسی کی اجارہ داری نہیں۔ جو مرضی آئے بن جائے۔باقی انجام کا کیا ہے بس جہاز کی ٹکٹ جیب میں ہو

dohra hai کہا...

شیخ چِلی والے خیالات تو میرے بھی ہیں روزانہ کہیں نا کہیں محل بنا رہا ہوتا ہوں مگر وہ محل لات مارنے سےنہیں ٹوٹتا بلکہ لات کھانے سے ٹوٹتا ہے۔

درویش خُراسانی کہا...

مجھے بھی کچھ ایسا ہی محسوس ہوا۔

زینب بٹ کہا...

بیگم بے زبان کو مارنے والوں کے انڈے ٹوٹ جاتے ہیں اور اگر بیگم شیخ کی ہم نوالہ اور ہم ''پیالہ'' ہو تو فیر مفت کنٹینر سیر وی ہو جایا کرتی ہے جی

سعد کہا...

حسین دوشیزہ سے بیاہ والی بات کر کے آپ نے کئی شیخ چلیوں کی دکھتی رگ پر ہاتھ رکھ دیا. بڑے ظالم او تسی!!

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.