یوم پاکستان

دن کو فون آیا کہ آج 23 مارچ ہے یوم پاکستان منانا مت بھولئے!

مجھ فون کرکے یاد دہانی کروانے والے محب وطن بھائی سے پوچھ بیٹھا سن کونسا تھا ،اس قرارداد کو پیش کرنے کا؟

فون کرنے والے نے تلخی سے کہا  جاپان کی شہریت کیا لے لی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔جاپانی ہی ہو گئے ۔۔شرم کرو۔۔۔

میں نے  پھر پوچھ لیا جناب سن بتا دیں ،بندہ ناچیز کو نہیں معلوم۔۔۔۔

نہایت طنزیہ  تلخی سے جواب ملا 23 مارچ انیس سو چھیالیس!!!

بحرحال میں  نےتسلی ہونے تک کہ واقعی سن انیس سو چھیالیس ہی ہے ۔۔۔ان صاحب  کو اچھی طرح  سمجھا !!!!!

ہو سکتا تھا بھائی صاحب "ایویں" ہی طنز کر رہے ہوتے۔

شام کو قرار داد پاکستان کی پارٹی تھی۔

مجھے تو قرار داد پاکستان کا سن معلوم کرنا تھا۔۔سب سے باری باری پوچھاتو۔۔۔۔۔۔۔۔

جو بیچارے سہی بتا رہے تھے وہ بھی مشکوک ہو گئے انہیں اپنے آپ پہ ہی شک ہو گیا تھا۔

ایک صاحب نے تو جوش خطابت میں قطعی طور پر کہا کہ انیس سو بیالیس ہے۔

ساتھ میں مذہبی تڑکہ لگایا کہ پاکستان تاقیامت قائم رہنے کیلئے بنا ہے۔

حدیث شریف بھی سنا دی کہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کو پاکستان والی سائیٹ سے ٹھنڈی میٹھی  ہوائیں آتی تھیں!!

قرار داد پاکستان تھی؟ یا ہے کیا شے؟

وہ تو مجھے بھی نہیں معلوم جناب۔۔۔

شاید مسلمانوں کیلئے کسی ملک کا بنانا تھا۔جس میں مسلمان آزادی سے جو دل میں آئے کریں ۔

کھائیں ، پیئیں  ، موج اڑائیں ۔۔۔موجاں جی موجاں والا ملک ؟

ہمارے پاکستان میں موجاں ہی موجاں ہیں۔۔

حکمران موجاں کر رہے ہیں تو عوام موج و مستی ۔۔مستی و خوشحالی،

بنگالی ؟ ان کی قرارداد کیا ہوگی؟  یوم بنگلہ دیش کیسے مناتے ہوں گے؟

قسمے۔۔۔ ایک بار  سننے کا اتفاق ہوا تھا۔۔۔تاریخ بیان کرنے والے ذاکرین کی کلاس کے مقرر سٹیج پر آتے ہیں۔

بنگالی اور بنگلہ بھاشا کی سمجھ آئے نا آئے ۔۔گالیاں اور بیستی مجھے سمجھ آ ہی جاتی ہے۔

اور اس وقت جن کا پاکستان ہے اور یوم پاکستان مناتے ہوں یا نا۔۔۔ !۔۔کرسمس تے ویلئنٹائن ڈے ضرور مناتے ہیں!!

ان کا کیا نئے آنے والوں کا استقبال گلدستوں سے ائیر پورٹ پر کر رہے ہوں گے۔

حشرات الارض ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔آر یو ریڈی؟

باقی استاد جی کی پوسٹ پڑ ھیں۔

http://jafar-haledil.blogspot.jp/2010/03/32.html?fb_comment_id=fbc_10150748798511796_22974271_10150748804941796#f1becbccb885fe3

 

 

 
یوم پاکستان یوم پاکستان Reviewed by یاسر خوامخواہ جاپانی on 8:57 AM Rating: 5

5 تبصرے:

عبدالقدوس کہا...

:ڈ دکھیا جاپانی پیر

محمد بلال خان کہا...

بلکل درست جی ، اس دن قراداد میں کیا پیش کیا گیا کسی کو معلوم نہیں

جعفر کہا...

مزے کی بات یہ ہے کہ انیس سو چالیس کی اصل قراردار میں صرف خودمختاری کی بات کی گئی تھی۔ تقسیم یا علیحدہ ملک کا کوئی ذکر نہیں تھا۔ یہ ذکر شاید تینتالیس یا چھیالیس میں ترمیم کرکے ڈالا گیا تھا۔ اور جی وہ علامہ اقبال والا خطبہ الہ آباد جس کے بارے ہمیں بتایا اور پڑھایا جاتا ہے کہ اس میں تصور پاکستان پیش کیا گیاتھا، یقین کریں اس میں ایسی کوئی بات نہیں تھی۔

ڈفر - DuFFeR کہا...

استاد تو تاریخ کو اپنی طرح گہنا نی سکتا
ثبوتوں کےساتھ بات کرنی چاہیے، ایویں اسن سار نہ بن

علی کہا...

بھائی جی گل تے ساریاں سچیاں نے پر کیا کریں وہ کسی نے ایس ایم ایس کیا تھا کہ تم جیتو یا ہاروں بے غیرتو۔۔۔۔ہمیں تم سے پھر بھی پیار ہے تو ایسا ہی معاملہ پاکستان کے ساتھ ہے کیا کریں یورپ کی جنت کے مقابلے بھی اپنی دوزخ اچھی لگتی ہے ۔ اپنے پاگل پن کا علاج کہاں سے لائیں؟

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.