پاکستان آریگاتوو

انیس سو پچانوے میں جب ونڈوز نائینٹی فائیو آیا تو آہستہ آہستہ عام یوزر میں انٹرنیٹ کا استعمال بڑھتا گیا۔اردو کا مواد اس وقت مجھے توکوئی خاص نیٹ پر نظر نہیں آیاتھا۔ صرف ایک اردو اخبار نیٹ پر ہوتی تھی جو شاید نیویارک سے نکلتی تھی اردو ٹائم کے نام سے۔بعد میں اردو کی سائیٹز کا اضافہ ہوتا گیا۔پاکستانی نیٹ یوزر کو عموماً چیٹ رومز وغیرہ میں گالی گلوچ کرتے یا لڑکیوں کو پی ایم کرتے ہی پایا۔


ناجانے مجھے کیا ہوتا تھا کہ میں نیٹ پر پاکستان یا پاکستانی لکھ کر سرچ کرتا تھا۔کوئی خاص مواد نہ ملتا۔پھر میں نے جاپانی میں ٔپاکستان جنٔ یعنی پاکستانی یا پاکستان لکھ کر کبھی کبھی سرچ کرتا تو جاپانی میں کچھ نہ کچھ پاکستان یا پاکستانی کے متعلق لکھا ہوا مل جاتا۔آہستہ آہستہ پاکستان اور پاکستانیوں کے متعلق جاپانی سائیٹ پر بہت کچھ لکھا ہو ملنا شروع ہو گیا۔زیادہ برائی ہی لکھی ہوئی ہوتی تھی۔ابھی تک کچھ ایسا ہی ہے۔


پھر کچھ عرصے بعد ایسی جاپانی خواتین کے بلاگز کا بہت اضافہ ہو جنہوں نے پاکستانیوں سے شادی کی ہوئی تھی یا پاکستانیوں سے طلاق حاصل کی ہوئی تھی۔ان بلاگز پرالف سے ی تک پاکستانیوں کی برائیاں ہی برائیاں لکھی ہوتی ہیں۔۔۔۔۔اور نوّے فیصد سچ ہی لگتا ہے۔میں نے بھی چند بار تبصرہ کیا اور خوب گالیاں وصولیں۔ظاہر ھے میں نے شرارتی قسم کا تبصرہ کیا تھا جو ان خواتین کو برا لگا اور انہوں نےمیری دھنائی کر دی۔اب بھی کبھی کبھی ادھر جاتا ہوں تو خیرو خیریت ٹھیک ہو جاتی ہے۔


جس پاکستانی اور جاپانی جوڑے کے تعلقات اچھے ہیں۔وہ زیادہ تر اسلام کے متعلق بلاگ وغیرہ میں لکھتے ہیں۔یا اسلام سیکھنے سکھلانے والی سائیٹ پر ہی پائے جاتے ہیں۔جاپانی مسلمانوں نے بھی بہت ساری اسلامی سائیٹ بنائی ہوئی ہیں۔جہاں پر قرآن اور حدیث کا جاپانی ترجمعہ اور دیگر دینی معلومات ملتی ہیں۔اس میں کوئی شک نہیں کہ جاپانی مسلمان دین کی خدمت پورے خلوص اور محنت سے کر رہے ہیں۔


گیارہ مارچ کو زلزلہ اور زلزلے کے بعد تسونامی اور اس کے بعد ری ایکٹر سے تابکاری کا اخراج کا حادثہ ہوا تو جاپان سے یورپین، امریکنز، چائینیز، کورین ،انڈیا والے بھی جو کہ یہاں جاپان میں پاکستانیوں سے زیادہ بستے تھے۔سب نے ٹوکیو انٹر نیشنل ائیرپورٹ پر جا ڈیرہ لگایا،جیسے جیسے فلائیٹ ملتی گئی جاپان سے بھاگتے گئے۔پاکستانی وہ ہی جاپان سے نکلے جو متاثرہ علاقوں میں رہتے تھے۔یا جو بچوں کے معاملے میں زیادہ حساس تھے۔باقی جو میرے جیسے تھے انہیں معلوم تھا کہ ہمارے لئے واپسی کی کوئی جگہ نہیں ھے۔جہاں ہیں جیسے ہیں کی طرح پڑے رہے۔


قصّہ کچھ اس طرح ہے کہ گیارہ مارچ کو زلزلہ آیا اور تیرہ مارچ کو پاکستانیوں نے پیسے جمع کئے اور کھانے پینے کا سامان لیکر متاثرہ علاقے میں پہونچ گئے۔متاثرہ علاقے کی حالت کچھ اس طرح تھی کہ پناہ گاہوں میں لوگ بھوکے پیاسے پڑے تھے۔نہ ہی عوامی رفاہی تنظیمیں اور نہ ہی حکومتی ادارے امداد کیلئے پہونچے تھے۔وہاں پر پاکستانی پہونچے اور دیگچے کڑچھے بھی ساتھ میں لیکر گئے۔


پاکستانیوں نے کھانا تیار کیا اور لوگوں کو کھلایا۔تقریباً سارے جاپان میں بسنے والے پاکستانی ایک ساتھ متحرک ہوئے اور جاپان کے مختلف علاقوں سے متاثرہ علاقے میں پہونچے یہ ایسا وقت تھا کہ ہر کوئی باہر کا بندہ اس علاقے میں جانے سے گھبرا رہا تھا۔آج تین ھفتوں کے بعد بھی پاکستانیوں کی امدادی کاروائیاں جاری ہیں۔جاپان کے میڈیا نے پاکستانیوں کی ان امدادی کاروائیوں کو الیکٹرانک میڈیا اور پرنٹ میڈیا پر دیکھایا جس سے یک دم پاکستانیوں کا امیج جاپان میں بالکل تبدیل ہو گیا۔


 جو  پاکستانی مسلمان دہشت گرد طالبان سمجھے جاتے تھے۔اب جاپانی ان پاکستانیوں کے مشکور ہیں۔ اگر جاپانی میں پاکستان یا پاکستانی کی نیٹ سرچ کی جائے تو پاکستانیوں کیلئے شکریئے کے جذبات والی تحاریر نیٹ پر ملتی ہیں۔اور پاکستانیوں  نےجن جن علاقوں میں امدادی کام کئے ان سے متعلقہ تحاریر اور وڈیو ملتے ہیں۔ان تحاریر پر پاکستانیوں کیلئے شکریئے کے تبصرے ملتے ہیں۔


اور ایک دلچسپ مشاہدہ کرنے کو ملا کہ میں اس وقت جس علاقے میں ہوتا ہوں اس کا نام تویاما ہے۔یہاں پر جو پاکستانی کھانوں کے ریسٹورنٹ ہیں۔عموماً خالی ہوتے تھے۔لیکن آج کل یہاں پر کسی وقت بھی کھانا کھانے چلے جائیں لائین میں کھڑے ہو کر انتظار کرنا پڑتا ہے۔ٹوکیو کے ایک دوست کا کہنا ہے کہ جس ریسٹورنٹ کے باہر پاکستانی جھنڈا لگا ہوا ہے۔وہاں پر بھی جاپانیوں کا رش ہے۔


اس کا کیا مطلب لیا جا سکتا ہے میں کچھ کہنے سے قاصر ہوں۔لیکن مجھے ان جذباتی قسم کے پاکستانیوں پر فخر بھی ہے اور بے انتہا محبت بھی محسوس ہو رہی ہے۔میں جب بھی کسی جاپانی نیٹ تحریر میں :پاکستان آر گاتو: لکھا پڑھتا ہوں۔آنکھیں خوشی سے بھیگ جاتی ہیں۔ پاکستان آریگاتو کا مطلب ۔۔پاکستان شکریہ بنتا ہے۔


 


  

 اور پاکستانی ائیر فورس کا طیارہ جو امدادی سامان لیکر آیا۔






 


 

پاکستان آریگاتوو پاکستان آریگاتوو Reviewed by یاسر خوامخواہ جاپانی on 11:15 PM Rating: 5

37 تبصرے:

سعد کہا...

ذرا نم ہو تو یہ مٹی بڑی زرخیز ہے ساقی!

جعفر کہا...

شاہ جی، آپ چاہے اڑ کے دکھادیں، آپ کو دہشت گرد ہی سمجھا اور لکھا جاتا رہے گا۔ چاہے جاپان کی گورمنٹ، سرکاری طور پر اعلان کردے کہ پاکستانیوں نے عظیم خدمات انجام دی ہیں، پھر بھی جن کی سوئی اٹکی ہے وہ اٹکی ہی رہنی ہے
اس لیے ایویں کہانیاں بنا بنا کے نہ سنائیں۔۔۔

وقاراعظم کہا...

شکر ہے جناب، کوئی تو اچھی خبر ملی...

جاوید گوندل ۔ بآرسیلونا ، اسپین کہا...

خدا پاکستانیوں اور پاکستان کو عزت و تکریم دے اور ہمیشہ یہ تاثر قائم رکھے۔ آمین

عمران اقبال کہا...

یاسر بھائی۔۔۔ یہ تحریر پڑھنے کے بعد میں آپ کا اور جاپان میں مقیم سب پاکستانی بھائی بہنوں کا شکر گزار ہوں کہ آپ سب نے اپنے اخلاق اور خدمت خلق سے نا صرف پاکستان بلکہ مسلمانوں کا نام اور امیج بہتر بنانے میں بہت عمدہ کردار ادا کیا۔۔۔۔ اللہ آپ سب کو بہت خوش رکھے۔۔۔ آمین۔۔۔

fikrepakistan کہا...

یاسر بھائی، جاپان میں مقیم پاکستانیوں کا طرز عمل جان کر بہت خوشی ہوئی، یہ نہ صرف پاکستان کے لئیے فخر کا مقام ہے بلکے اسلام کے لئیے بھی باعث فخر ہے، بہت بہت بہت خوشی ہوئی جان کر اللہ وہاں پہ مقیم پاکستانیوں کو مزید توفیق دیں کے وہ اس ہی طرح پاکستان کا نام روشن کریں اور نہ صرف جاپان بلکے جہاں جہاں بھی پاکستانی مقیم ہیں وہ اس سر زمین کے ساتھہ پوری طرح سے وفادار رہیں۔

عامر شہزاد کہا...

یہ سب پڑھ کر بہت خوشی ہوئی، شائد بیان کرنا مشکل ہے :D

انکل ٹام کہا...

ناندے کُڑے !!!
جن پاکستانیوں نے مدد کی انکو تو آری گاتو ہی کہا جاے گا لیکن جو بھگوڑے بن کر بھاگ گئے تھے ان سب کو
باکا یارو کہنا چاہیے :mrgreen:

انکل ٹام کہا...

آخری ویڈیو کے بلکل آخر میں دائی جووکا کس بات پر کہا گیا ہے ؟؟ ڈھکنا لگنے پر ؟؟

انکل ٹام کہا...

جیسے طالبان بار بار اعلان کرتے ہیں کہ سویلین پر دھماکے ہم نے نہیں کیے لیکن پھر بھی کچھ لوگ چاچا اجمل کے بلاگ پر لکھ دیتے ہیں کہ انہوں نے ہی کیے ہیں ۔

شعیب صفدر کہا...

کوب مین اُن پاکستانیوں کا شکر گزار ہوں جو جاپان میں ہمارے ملک اور اپنے لوگوں کے لئے عزت کما رہے ہیں!
شکریہ!!!

qamar کہا...

yes sab perdh ker bohat achcha laga
ager koi naqad imdad japan government/ngo ko bhijwana chahey tau is ka kia tareeqa/account etc hey

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

بے شک

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

چلیں فی الحال چاول چھولے بک رہے ہیں۔کچھ تو مال بن رہا ہے نا :D

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

کافی تبدیلی محسوس ہو رہی ہے۔خاص کر جاپانی بلاگرز کی تحاریر میں

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

آمین

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

یہ تو یہاں مقیم پاکستانیوں کے جذبات ہیں۔کہ اس ملک سے ہم لوگوں نے رزق کمایا ہے اور کما رہے ہیں۔

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

رب العزت سے دعا ہے کہ ہم سب پاکستانیوں میں بھی ایک دوسرے کیلئے ایسے اچھے جذبات پیدا کردے۔آمین

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

ہمیں آپ کو خوش دیکھ کر خوشی ہوئی :D

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

ارے نہیں انکل ٹام ایسا نہیں ہونا چاھئے۔ہر بندے کو اپنی حفاظت کا حق حاصل ہے۔

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

آپ سب کے ایسے اچھے جذبات کا بہت بہت شکریہ

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

قمر اگر آپ پاکستان میں یا کسی دوسرے ملک میں ہیں تو جاپان کے کونسلیٹ یا ایمبیسی میں رقم جمع کروا دیں۔

دوست کہا...

وتعز من تشاء وتذل من تشاء
سن کر خوشی ہوئی۔

افتخار اجمل بھوپال کہا...

وَأَن لَّيْسَ لِلْإِنسَانِ إِلَّا مَا سَعَی ۔ ۔ اور یہ کہ ہر انسان کیلئے صرف وہی ہے جس کی کوشش خود اس نے کی ۔ سورت 53 ۔ النّجم ۔ آیت ۔ 39
اللہ نيکی کا بدلہ کئی گنا ديتا ہے اس دنيا ميں اور آخرت ميں بھی ۔ جاپان ميں بسنے والے پاکستانيوں نے اللہ کی مخلوق کی آڑے وقت مدد کی تو اللہ نے اُسی وقت انہيں اس عزت سے نواز ديا جو کئی دہائيوں ميں وہ حاصل نہ کر سکے تھے ۔ سُبحان اللہ اور آخرت ميں بھی اس کا صلہ دے گا

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

ہمارے ریسٹورنٹ مال بنا رہا ہے۔۔ان کی سوئی بے شک اٹکی رہے جی

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

شکریہ

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

انشا اللہ

مکی کہا...

یاسر آریگاتوو :)

مکی کہا...

بڑی انمول بات کی آپ نے :)

یہ فرمائیے گا کہ کسی کافر کے ساتھ کی گئی نیکی کی شرعی حیثیت کیا ہے؟

ڈاکٹر جواد احمد خان کہا...

اچھا لگا یہ جان کر ....شاید یہ واحد وجہ ہے جیس نے امید کی آخری کرن کو ابھی تک روشن رکھا ہوا ہے.

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

میرے ناقص علم کے مطابق نبی اکرم صلی اللہ وسلم نے کافروں کے ساتھ ہی نیکی کی تھی۔
مسلمانوں سے تو قربانیاں مانگی جاتی ہیں۔ :D

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

دو ایتاشی مشتے :lol:

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

امید پہ دنیا قائم ایک ٹرک کے پیچھے لکھا جملہ ہوتا ہے جی۔
اور ناامیدی تو ہے ہی گناہ :D

عمران اقبال کہا...

بلکل درست فرمایا یاسر بھاءی۔۔۔

مکی کہا...

ہنڑ ارام اے :D

پکی پکی پاکستانی کہا...

ماشاءاللہ.. ان پاکستانیوں کی عظمت کو سلام..
انکل جی آپ نے یہ سب لکھ کر بہت اچھا کیا... اپنے ہم وطنوں کے بارے میں اتنا اچھا پڑھ کر خوشی سے آنکھیں بھیگ گئیں..

عمیر کہا...

立派な

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.