زلزلہ ۔دو

جاپان ایک جزیرہ ہے۔عموماً موسمی طوفان وغیرہ یہاں آتے رہتے ہیں۔زلزلے کے جھٹکے تقریباً سارا سال چلتے رہتے ہیں۔کہا جاتا ہے کہ سال میں تقریباً دوہزار سے زیادہ زلزلے کے جھٹکے  محسوس کئے جاتے ہیں۔ان میں کچھ بڑے ہوتے ہیں اور کچھ ہلکے پھلکے یہاں عمارتوں کا تعمیراتی کام  زلزلہ پروف بنیادوں پر کیا جاتا ہے۔اور حکومت تعمیراتی کاموں کو سختی سے چیک کرتی ہے۔ایک دو سال پہلے سے ایک زلزلے کی پیشگی اطلاع دینے والا سسٹم متعارف کرایا گیا اور وزارت موسمیات زلزلہ آنے کی پیشگی اطلاعات ریڈیو یا ٹی وی پر نشر کروا دیتا ہے۔


کل رات بھی  دس سے گیارہ بجے  کے درمیانی اوقات میں مسلسل اس طرح کی وارننگ ٹی وی پر آرہی تھیں۔اس کے بعد میں سونے کیلئے چلا گیا تھا شاید بعد میں بھی وارننگ آتی ہی رہی ہو۔


جاپان میں جنگی یا آسمانی آفات کیلئے عوام کو پہلے سے تیار رکھا جاتا ہے۔تیار رکھنے سے شاید آپ کے ذہن میں ٹریننگ کورس وغیرہ کا آئے ۔ایسی کوئی بات نہیں ہے۔ایمرجنسی حالات کیلئے ہر چھوٹے بڑے علاقے میں پناہ گاہ کے طور پر کچھ عمارات کو مخصوص کر دیا گیا ہوتا ہے۔کسی قسم کی موسمی طوفان یا زلزلہ قسم کی ایمرجنسی میں عوام کو علم ہوتا ہے کہ کہاں پر پناہ لی جاسکتی ہے اور کھانے پینے کی اشیاء لینے کیلئے ڈنڈے نہیں کھانے پڑیں گے۔


پچپن سے ہی سکولز میں نظم و ضبط کی غیر محسوس طریقے سے تربیت کر دی جاتی ہے۔اور عموماً عوام میں تنظیم ہوتی ہے آپی دھاپی نفسا نفسی نہیں ہوتی۔کچھ لوگ ایسا کریں بھی توآسانی سے کنٹرول کر لئے  جاتے ہیں۔ 


یہاں پر ہم جیسے غیر ملکی بھی نہ چاھتے ہوئے انسانی زندگی گذارنے پر مجبور ہو جاتے ہیں۔لا شعوری طور پر کچھ سلیقہ آ ہی جاتا ہے۔اپنے جیسوں کے اجتماع میں ہم لوگ یہ سلیقہ وغیرہ بھول کر آزادی حاصل کر لیتے ہیں۔


انیس سو پچانوے میں کوبے میں زلزلے نے بہت تباہی مچائی تھی۔ جاپان نے جب سے زلزلہ کی شدت کا ریکارڈ رکھنا شروع کیا ہے  یہ سب سے بڑا زلزلہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔ اس دفعہ زلزلہ شدیت تھا تو سونامی کی شدت اس سے زیادہ  تھی سونامی شدیت تھی تو ایٹمی پاور پلانٹ کی تباہی مزید شدیت ہے۔آج کی خبر کے مطابق تیسرا پاور پلانٹ بھی خطرناک ہو گیا ہے۔اس کا مطلب تباہ ہو نے کے قریب ہو گا ۔بحر حال خطرہ شدید ہے۔


سندائی نامی علاقے میں مقیم کچھ پاکستانیوں کی خیر و عافیت معلوم نہیں ہو رہی۔کچھ جاپانی مسلمان بھی اس علاقے میں بستے ہیں۔


اتنے شدید زلزلے کے بعد بھی مسلسل زلزلے کے ہلکے جھٹکے آ رہے ہیں۔انیس پچانوے کے زلزلے میں بھی ایمرجنسی پناہ گاہیں بھی تباہ ہو گئی تھیں اس دفعہ بھی کچھ ایسا ہی معاملہ ہے۔یعنی بچے کچھے تباہ حال لوگوں کی پناہ گاہ کا مسئلہ  ہے۔لیکن جاپان حکومت یہ بہت جلد میسر کر دے گی۔


بعد کے مسائل میں ایسے حالات میں خواتین کیلئے مسئلہ ہو تاہے۔حاجات ضروریہ کے مسائل ریکارڈ ہیں۔اور خاص طور نفسیاتی اور اعصابی دباو کے شکار لوگ کمزور اور اپنی حفاظت نہ کر سکنے والوں سے زیادتی کر جاتے ہیں۔کوبے کے زلزلے کے بعد بھی اور نیگاتے کے چھوٹے پیمانے کے زلزلے کے بعد بھی خواتین کے ساتھ جبری زیادتی کے جرائم ریکارڈ ہیں۔جرائم کرنے والے ہر جگہ پائے جاتے ہیں۔


جاپانی ایک ترقی یافتہ قوم ہے۔اس تباہ حالی کا اندازہ جاپانی حکومت اور عوام کو پہلے سے ہی تھا۔ٹوکیو میں اسی سکیل یا اس سے بھی بڑے سکیل کے زلزلہ کے آنے کا خطرہ بتایا جاتاہے۔قدرتی آفات کا اندازہ لگا یا جاسکتا ہے اس سے بچنا شاید مشکل ہے۔ان آفات سے ہونے والے جانی یا مالی نقصانات کا اندازہ لگانا مشکل ہوتا ہے۔اس دفعہ کے زلزلے اور سونامی سے تقریباًتین لاکھاسی ہزار افراد متاثر ہونے کا بتایا جارہا ہے۔اور دس ہزار افرادلاپتہ اور ایک سے دو ہزار افراد کی اموات کا اندازہ لگایا جا رہا ہے۔حتمی تعداد کا کچھ عرصے بعد ہی علم ہو گا۔مالی نقصان کا فی الحال کوئی اندازہ نہیں ہے۔مثال کے طور پر ہم نے اسی علاقے کے گاڑیوں کے اوکشن سے پانچ گاڑیاں زلزلہ کے آنے ایک دو دن پہلے خریدی تھیں۔جن کے متعلق کسی قسم کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔


ہم نے بھی کوئی جستجو نہیں کی کہ ان حالات میں اس علاقے کے متاثرین کو اپنے مال و اسباب کیلئے کچھ پوچھنے سے شرم محسوس ہو رہی ہے۔اگر اطلاع آگئی تو ٹھیک نہیں تو ہمارا ارادہ یہی ہے کہ کسی قسم کی جستجو نہیں کریں گے۔ اسی طرح اس علاقے سے دور بسنے والے بھی اس زلزلے سے متاثر  ہوئے ہیں۔اس علاقے کے جاپانی عوام تباہ ہوئے ہیں تو پاکستانی جو اس علاقے میں بستے ہیں ان کو بھی کاروباری نقصان بہت ہوا ہوگا۔ان پاکستانیوں کی آمدنی سے پاکستان میں بھی کئی گھرانے متاثر ہوں گے،یعنی پاکستان بھی اس آفت سے متاثر ہوا ہے۔فی الحال حکومت جاپان پورے زور شور سے متاثرین کی مدد کر رہی ہے۔ان علاقوں میں پینے کی پانی اور کھانے پینے کی اشیاء کا مسئلہ ہے۔رستے تباہ حال ہیں مٹی کے تیل کی کمی سے صبح شام کی حد سے زیادہ سردی میں متاثرین تکلیف میں ہیں۔یہ علاقے کافی سرد علاقہ ہے اور اس دفعہ سردی بھی زیادہ ہے۔ایک گاوں کے تقریباً نو ہزار افراد جو پناہ گاہ کی طرف روانہ ہوئے تھے ان سے رابطہ نہیں ہورہا۔ان حالات میں روزانہ بلاگ لکھا جائے تو مسائل بتانے سے قاصر ہوں۔۔


آرامدہ رہائش اور کسی قسم کی تکلیف محسوس کئے بغیرروزمرہ زندگی گذارتے ہوئے میں ان آفت زدہ لوگوں کی تصاویر یا وڈیو بلاگ پر لگانے میں شرم محسوس کرتا ہوں۔جس کیلئے معذرت خواہ ہوں۔

زلزلہ ۔دو زلزلہ ۔دو Reviewed by یاسر خوامخواہ جاپانی on 12:28 PM Rating: 5

5 تبصرے:

جاوید گوندل ۔ بآرسیلونا ، اسپین کہا...

یاسر بھائی!
اللہ تعالٰی سب پہ اپنا کرم خاص رکھے اور خدا جاپان میں بسنے والے سبھی بنی نوع انسان کو اپنے حفظ و امان میں رکھے۔

مجھے آپ کے اس نقطعہ نظر سے اتفاق ہے کہ تباۃ حال لوگوں کی تصاویر و ویڈیو وغیرہ جو پہلے ہی نہائت تواتر سے میڈیا میں آرہی ہیں۔ ان سے شاید ہماری قطع رحمی کا تصور پیدا ہوتا ہے۔ لہذا تباہ وبرباد ہونے والوں کے احترام میں ایسا نہیں کیا جانا چاہئیے۔ البتہ جنرل تباہی کے متعلق یا کسی خاص تکنیکی وجہ سے کوئی تصویر لگانی ہو تو میری ذاتی رائے میں یہ ایک الگ بات تصور کی جائے گی۔ بہر حال ویڈیو یا تصاویر وغیرہ میری راءے میں ضروری نہیں بس آپ لوگوں کی خریت اور وہ پاکستانی ، مسلمان، اور جاپانی وغیرہ یا دوسری قومیتوں کے لوگ جنکا اتہ پتہ نہیں چل رہا بس وہ اللہ کے فضل سے خریت سے ہوں ۔

آپ تازہ ترین حلات سے آگاہ کرہے ہیں اور خاور بھائی بھی میری رائے میں کافی ہے۔

۔ آپ نے ممکنہ نقصانات کی صورت میں انشورش وغیرہ تو کروا رکھی ہوگی؟ اللہ تعالٰی سب کے نقصانات پورے کرنے کا سہیل ذرئعیہ بنا دے۔ آمین

افتخار اجمل بھوپال کہا...

ترقی کا راز نظم و ضبط ہے جو جاپان ميں مکمل موجود ہے اور ہمارے ملک ميں مکمل مفقود باوجويکہ ہمارا دين اس کی تلقين کرتا ہے اور ہمارے قائد نے بھی يہی کہا تھا ايمان ۔ اتحاد اور نظم

خرم ابن شبیر کہا...

کچھ دن سے میں مصروف تھا لیکن جس دن جاپان میں زلزلے اور سونامی کا سنا اور دیکھا تو یقین کریں آنکھوں سے آنسوں نکلے آئے بہت نقصاں ہوا سونامی کو دیکھ دیکھ کر رونا آتا رہا اور ان خبروں کے درمیاں میں میں آپ کے بارے میں بھی سوچتا رہا کہ یاسر بھائی بھی جاپان کے ہیں اللہ ان کو اپنے ایمان میں رکھے اللہ تمام مسلمانوں کو اور انسانوں کو اپنی ایمان میں رکھے آمیں اللہ سب بہتر فرما دے گا
آپ کے علاوہ ایک دو اور بلاگرز بھی ہیں جو جاپان سے ہیں ان سے رابطہ ہوا ہے کیا آپ کا
میری دعا تو یہی ہے اللہ تعالیٰ اپنا کرم فرمائے آمین

ڈاکٹر جواد احمد خان کہا...

اب جب خبریں آنا شروع ہوئی ہیں تو اندازہ ہوا ہے کہ معاملات زیادہ گھمبیر ہیں . الله تعالیٰ سے دعا ہے کہ آپ کواور سب کو اپنے حفظ و امن میں رکھے اور آپکی مشکلات اور خسارے کو جلد دور کردے ..

امتیاز کہا...

اللہ زمین پر رحم کرے
آمین

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.