یہ منہ متھہ اور شوق مشہوری دا

ہم ذرا کمزور واقع ہوئے ہیں یعنی دم خم کوئی خاص نہیں ھے۔کوئی لڑائی جھگڑا کرنے کی کوشش کرتا ھے۔


تو بھاگنے کا راستہ تلاش کرتے ہیں۔عموماًہم اپنی کوشش میں کامیاب ہوجاتے ہیں۔کہ نیت جو صاف ہوئی جی۔


یہ نیت صرف وقتی طور پر ہڈی پسلی بچانے تک ہی پاک صاف ہوتی ھے۔


نیٹ وغیرہ پر ہم بھی اپنے دل کی بھڑاس نکال ہی لیتے ہیں۔کہ آپ کی پہونچ سے دور جو ہوئے۔


عموماً قدردان دلبر جان جان من بھائی و بہن جان حضرا ت نیٹ پر بھی ہماری جان بخشی کر ہی دیتے ہیں۔


جن کے ہم نہایت مشکور ہیں۔


ہم اپنی کمزوری کو  کچھ کم کرنے کے چکر میں ورزش وغیرہ کر لیتے ہیں۔جس کا ابھی تک ہمیں کوئی فائدہ نظر نہیں آرہا تھا۔


لیکن پچھلے دنوں نہ جانے کیوں جس سپورٹس کلب میں ہم جاتے ہیں۔وہاں کے کرتا دھرتا حضرات نے نہایت مودبانہ طریقے سے ہمیں آفر کی کہ جاپان کے سپورٹس کلب کی کوئی تنظیم ھے۔ اور یہ تنظیم اشتہاری پوسٹر چھپوا رہی ہے۔ان کی خواہش  تھی کہ ہمیں اس اشتہاری پوسٹر پر چھاپ دیں۔


یقین مانئے ہماری خوشی کی انتہا ہو گئی۔ہمارا ننھا منا سینہ ہمیں سو فیصد یقین ھے کہ دو میٹر چوڑا اور اتنا ہی موٹا ہو گیا تھا۔


لیکن جی ہم موٹے نہیں ہیں وزن یہی کچھ چھیاسٹھ کلو گرام اور کچھ تولے ہو گا۔ کبھی کبھار خوش خوراکی سے ستر کلوکے آس پاس چلا جاتا ھے۔اور ہم دڑکی لگا کر کم کر ہی لیتے ہیں۔


تو بات ہو رہی تھی ہماری مشہوری کی۔۔۔۔۔انہوں  نےہمارے کچھ فوٹو لئے اور کہا کہ باقی کنٹریکٹ کے بعد آپ کے فوٹو شوٹو کھینچیں گے۔


ہم جب خوشی خوشی گنگناتے ہوئے گھر آئے اور بیگم صاحبہ کو بڑے فخر سے بتا یا کہ ہم ذرا ماڈل شاڈل ہونے والے ہیں۔ہو سکتا ھے کوئی فین کلب وغیرہ بھی بن جائے۔ہمارے جذبات عروج پر تھے۔


ہماری بیگم ایک تو کچھ انتہا پسند ہیں۔لیکن فائدہ کے مطابق لچک بھی آ جاتی ہی ان میں۔


اگر بگڑ جائیں تو ہماری ہی شامت آتی ھے۔


پہلے تو پوچھا کہ کتنے پیسے ملیں گے؟


پیسوں کا ہم نے بتایا کہ یہی کچھ ایک لاکھ ین ہوں گے شروع میں  اوربعد میں مزیدکام بھی ملنا شروع ہو گیا تو پھر عیاشیاں ہی عیاشیاں ہوں گی۔


یہ ایک لاکھ ین پاکستانی ایک لاکھ روپیہ ہی بنتا ھے۔لیکن وقت شاید جاپان میں پاکستانی ایک لاکھ سے کم ہی ہو۔


بیگم صاحبہ خاموش ہو گئیں۔شام کا کھانا کھانے کے بعد ہماری تصویریں اٹھائیں اور پھاڑ دیں ۔


اور تعمل سے کہا چھپی ہوئی اور نظر آنے والے تمام فحاشیوں سے بچنا چاھئے۔


ہمیں غصہ آیا کہ اس میں کیا برائی ھے۔


اور کسی وحشی قبیلہ کے اعتقاد کے مطابق ہماری روح بھی اس تصویر میں قید نہیں ہو سکتی۔


اور کونسا ان تصاویر میں ہم صرف ایک چڈی پہنیں گے؟


وزن کم کرنے کا کوئی لباس ھے جی( کا آتس ) اس کی مشہوری تھی۔جس میں ہم ننگے بھی نہیں ہوتے۔


لیکن بس ہماری بیگم صاحبہ بگڑ گئیں کہ کوئی خاص مال بھی نہیں مل رہا اور ایسے کام مجھے پسند نہیں۔


ہم نے لاکھ کہا کہ ہمیں آپ کی پسند ناپسند سے کیا لینا ہمیں تو ماڈل ہونا ھے۔


لیکن  ہمیں تو بیگم صاحبہ کی اس بات نے نہایت دکھی  کر دیا کہ ایک تو ننھے منے اور یہ منہ متھہ اور چلے ماڈلنگ کرنے۔


یہ لوگ بس ایک دفعہ سستا استعمال کریں گے۔اور اس کے بعد کچھ نہیں۔


خوامخواہ کا گناہ بے لذت کرنے نہیں دونگی۔


ہمیں اور تو  کچھ نہیں منہ متھہ پر  حملہ نہایت ناپسند گذرا اور ہم منہ بسور کر بیٹھ گئے۔


لیکن بیگم صاحبہ دوسرے دن بھی ٹس سے مس نہ ہوئیں۔


آخر ہار کمزور کی ہوتی ھے۔گھر تو ہمارا اپنا خریدا ہوا ھے۔لیکن بعد میں جاپانی ہونے کی وجہ سے۔


 ہم ہیں


گھر داماد اس لئے کمزور ہی ہوئے جی۔:lol:


بیگم صاحبہ کو کریدنے کے بعد ہمیں اتنی ہی بات سمجھ آئی کہ ہماری بیگم ہیں سخت سڑیل۔


ہماری مشہوری اور بلبلان جاپان کی نظروں کی تسکین انہیں گوارا نہیں ھے۔


شادی کے بیس سال بعد بھی بیگم جیلس یعنی سڑیل ہوں تو جناب ہمارے جیسے شوہر صاحب تو اتنے میں خوش ہو جاتے ہیں۔


مشہوری کا کوئی اور طریقہ سوچتے ہیں۔اس دفعہ تو ہماری دال نہ گلی اگے اگے دیکھو کیا ہوتا ھے۔

یہ منہ متھہ اور شوق مشہوری دا یہ منہ متھہ اور شوق مشہوری دا Reviewed by یاسر خوامخواہ جاپانی on 5:03 PM Rating: 5

13 تبصرے:

شیخو کہا...

پا جی
بات درآصل یہ ہے کہ عورت کو جب کسی مرد سے زیادہ پیار ہوتا ہے وہ اپنے مرد کو چھپا کے رکھنا چاہتی ہے.ہر معاشرے کی عورت ایک جیسی ہی سوچ رکھتی ہے محبت کے معاملے میں.رہ گئی خوبصورتی کی بات تو یہ بے معنی سی چیز ہے.
شکر کرو اللہ کا کہ آپ کو اتنی اچھی بیوی ملی

شاہدہ اکرم کہا...

بہُت مزے کی تحریر لگی لیکِن سب سے مزے کی بات یہ ہے کہ آپ نے بہُت سچے طریقے سے سچ بتا دیا کہ بیگم کی بات کیُوں ماننے پر مجبُور ہیں :lol: :lol: :lol:

عمار ابنِ ضیا کہا...

ہاہاہا۔۔۔
ہماری ہم دردیاں آپ کے ساتھ ہیں۔ اللہ آپ کو مشہوری کا کوئی اچھا موقع عطا فرمائے۔ :)
ابتدائی پیرا پڑھ کر ایسا لگا جیسے ہمارا حال بیان کیا گیا ہو۔ :)

حجاب کہا...

بہت خوب یاسر اچھا لکھا ہے مگر بیگم کی شان میں اتنی گستاخیاں ۔۔ پڑھوائیں ذرا بیگم کو یہ تحریر پھر پتہ چلے سڑیل کہنے کا جرمانہ :P

شاہدہ اکرم کہا...

حِجاب یہی تو بات ہے مزے کی نہیں پڑھوا سکتے بیگم لوکل ہیں جو مرضی لِکھیں اُنہیں کونسا پڑھنا آتا ہے یا پڑھیں گی :lol: :lol: :lol:

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

شاہدہ جی
یہ تو ہماری قسمت اچھی ھے۔پڑھ سکنے والی ہوتی تو۔۔۔۔۔گئے کام سے۔

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

نہ حجاب جی نہ
میں اتنا سادہ بھی نہیں ہوں
آبیل والا کام ہم نے نہیں کرنا۔

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

شیخ جی۔۔
الحمد اللہ اللہ میاں کا بہت بہت شکر گذار ہوں۔
اللہ میاں آپ کو بھی ایسا شکر گذار بنائے۔
پھر حال پوچھوں گا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

شاہدہ جی
گھر داماد تو گھر داماد ہوتا ھے۔
پاکستانی گھر والی ہوتی تو بھی ہمارا حال کچھ ایسا ہی ہوتا۔

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

عمار جی
ہم نے کسی کی ھڈی پسلیاں نہیں لکھا اور نہ ہی اپنی۔
آپ بھی ایسے ہی ہیں؟

وقاراعظم کہا...

68 سے 70 کے جی وزن. 8O
او پائی جی کھاتے کیا ہو جی آپ؟ ہمارا تو 60 بھی نہیں ہے :(
اور یہ اسپورٹس کلب والوں کی نظروں کو کیا ہوگیا ہے جی؟ :mrgreen:
کاش ہمارا کوئی جاسوس ہوتا ادھر تو بیگم صاحبہ کے لیے سڑیل جیسے الفاظ استعمال کرنے پر آپ کو لگ پتہ جاتا. :wink:

شگفتہ کہا...

:)

دلچسپ :)

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

وقار ۔ ہوا کھاتے پانی پیتے ہیں!
آپ کو نہیں ملتے کیا ہوا اور پانی؟
اسپوٹس کلب والے بینگے ہیں۔
آپ سے ایسی ہی امید ہے۔

شگفتہ۔۔۔شکریہ

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.