کھوپڑی کی کھڑ کھڑ

عقل والے  عموما اپنی عقل کو ناقص العقل ہی کہتے ہیں۔جب بھی  میں عقل والوں کو ایسے کہتے سنتا تھا۔حیرت کے ساتھ خوشی ہوتی تھی ۔


 کتنے اعلی انسان ہیں۔اتنے عقلمند اور دانشور ہونے کے با وجود کسرنفسی سے نہیں ضد اور سختی سے کہتے ہیں کہ وہ ناقص العقل ہیں۔


وقت کے گذرنے کے ساتھ ساتھ یا یوں کہہ لیں جو ں جوں زمانے کو ترقی کرتے دیکھا عقل انسانی کا قصور کھلتا چلا گیا۔


کیسٹ جو ٹیپ ریکاڈر میں لگا کر سنتے تھے۔آنے والی نسل اسے حیرت سے دیکھا کر  ےگئی جیسے ہم پرانے وقتوں کا باجے والا ریکارڈ دیکھتے ہیں۔


وڈیو ٹیپ کا اچھی طرح یا  دہے ۔کہ انیس سو پچانوے میں گھر والی کی ساتھ چہل قدمی کرتے ہوئے بات کی تھی ۔


کہ یہ  وڈیو ٹیپ ایک  آڈیو سی ڈی  کی طرح کی  سی ڈی میں آ جائےگی۔اب تو پتہ  نہیں کس کس میں  یہ فلمیں اور مویز آگئی ہیں۔


ٹی وی بہت جلد اس وقت کے ٹی وی سے مختلف شکل میں آ جائے گا۔


دیوار پر کیلنڈر کی طرح لگائیں اور دیکھیں۔ یا دیوار پر روشنی ڈالیں اور ٹی وی دیکھیں  ۔ جیسے پروجیکٹر سے فلم دیکھتے ہیں ۔


یہ پرو جیکٹر آپ کا موبائل بھی ہو سکتا ھے۔بلکہ آ چکا ہے۔ کچھ فنی کوالٹی  اچھی کرنی چاہتے ہیں.


 اور کچھ ابھی اس وقت جو ٹی وی ٹیکنالوجی ھے۔


اس  سے  مزیدکمانا چاھتے ہیں۔


 آج سے سو دو سو سال پہلے گذرنے والے لوگ اس دور کی انسانی ترقی کا تصور بھی نہیں کر سکتے ہوں گے۔


سو دو سو سال بعد  یہی بات ہمارے متعلق کوئی کہہ رہا ہوگا۔


انسان کے ارادے اور حوصلے ختم ہونے کا نام ہی نہیں لے رہے۔نہ جانے کائنات کو کہا ں کہاں تک تسخیر کریں۔


 کیسے کیسے عقلمند  دانشور گزرے ہیں۔دنیا جنہیں جانتی تھی اور جانتی ہے۔ بس مر گئے۔خاک میں مل کے خاک ہوئے۔


اسی مٹی سے پیدا ہوئے زمین پر تکبر سے چلے اسی مٹی میں خاک ہوئے۔


ایک فلم دیکھی تھی ۲۱ گرام  یعنی انسان کا مرنے کے بعد صرف  ۲۱ گرام وزن کم ہو جاتا ھے۔


بس یہ عقل یہ غرور یہ تکبر اس ۲۱ گرام کے کم ہوتے ہی خاک ہو جاتا ھے۔


یہ ہی ۲۱ گرام نباتات میں بھی ھے حیوانات میں بھی ہے۔


نباتات حیوانات اور انسان میں فرق عقل کا ہی ہے۔


نباتات اور حیوانات میں یہ عقل ہوتی تو نیمبو کا درخت  نیمبو کا پھل دینے کے ساتھ ساتھ ہوائی جہاز اڑا رہا ہوتا۔


شیر جنگل میں دھاڑنے کے ساتھ ساتھ نکٹائی لگائے کمپیوٹر کے سامنے  بیٹھا ٹک ٹکا ٹک کی پنچ کر رہا ہوتا۔


معلوم نہیں یہ کیوں اور کس لئے ہو رہا ھے۔یہ جواب عقل بھی نہیں دیتی۔


جب عقل بھی یہاں بےبس ھے۔


 تو جو اللہ میاں نے کہا وہ  ہی حق ھے۔


وہ جانے اور اس کی حکمت۔مخلوق اس کی۔خالق وہ ۔مالک وہ۔

کھوپڑی کی کھڑ کھڑ کھوپڑی کی کھڑ کھڑ Reviewed by یاسر خوامخواہ جاپانی on 11:23 PM Rating: 5

10 تبصرے:

جہالستان سے جاہل اور سنکی ۔ کہا...

اچھا کہا آپنے ۔ دیکھیں اودھر سے اب کیا کہا جاتا ہے ۔

عثمان کہا...

او بھائی۔۔۔۔ خلیل خوامخواہ جبران! 8O
گسہ جان دیو!

کاسف نصیر کہا...

ہااااااااااااااااااااااااااااااااااااااااااااااااااااااااااااااا
تکبر

ہوسٹن کا باسی باپ کی تلاش میں کہا...

یار سُنا ھے جاپانی کتا شوق سے کھاتے ھے ۔ یہ اسی کا اثر لگتا ھے۔۔ :mrgreen: :lol:

بدتمیز کہا...

ضیا کے نام سے تبصرے اس کے نہیں لگتے

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

معلومات کیلئے عرض ھے۔جاٹ صاحب :wink:
جاپانی تو نہیں کورین ضرور کتا شوق سے کھاتے ہیں ۔ :P

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

ہائے ہائے ہائے۔
میں نے یہ اپنی کھوپڑی کی کھڑ کھڑ لکھی ھے۔
کیوں خوامخواہ میں کسی پنگے میں گھسیڑ رہے ہیں :cry: :cry: :cry:

افتخار اجمل بھوپال کہا...

اللہ مغفرت کرے ہمارے نويں دسويں ميں سائنس کے استاذ شيخ ھدائت اللہ صاحب کی کہا کرتے تھے ايک وقت آئے گا ايک لمبا خط يا ايک چھوٹی سی چيز پر لکھ کر جيب ميں ڈال کر لے جائيں گے يا ڈاک ميں امريکا جاپان تک بھيج ديں

خاور کہا...

جب ایک بندہ خود اپنے اپ کو
‎ناقص عقل کہ رها هے تو اس کو عقل مند ثابر کرکے اپ کیا کرنا چاہتے هیں؟
‎اس کو جھوٹا ثابت کرنا یا اس کو منانق ثابت کرنا؟
‎میں اپ کی جگه هوں تو اس بندے کو ناقص عقل تسلیم کرکے اس کے ساتھ صلح رکھنے کی کوشش کروں گا
‎ناں که اس کو عقل مند ثابت کرنے کے لیے جھگڑا شروع کردوں

یاسر خوامخواہ جاپانی کہا...

خاور جی بجا فرمایا :lol:
آئیندہ سے ایسا ہی کروں گا :mrgreen:
اجمل صاحب کچھ ایسا ہی ہو رہا ھے۔

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.