بے تکی باتیں

آج پھر ایک صاحب نے پاکستان کی برائی کی۔اور مجھے برا لگا۔وہ عمر میں بڑے تھے کچھ جواب نہ دے سکا
عموما پردیس میں رہنےوالے ھم لوگ پاکستانی حکومت کی برائی کرتےھیں امن امان نہ ھونےکا
شکوہ رشوت کرپشن فلاں فلاں نہ جانے کیا کیا شکایات کے انبار ھو تے ھیں اس میں کوئی شک نہیں کہ کارو بار شاید ھم یھاں سے جاکر نہ کر سکیں اور نوکری چاکری کی عمر نھیں ھے یا ادھر جتنی تنخواہ نھیں ملنے کی امید اور وہ مل بھی نھیں سکتی لیکن میں جب بھی پاکستان گیا مجھے تو کچھ بھی برا نھیں لگا سب اچھا ھےجی پاکستان میں لیکن میں نے یہ ضرور محسوس کیا کہ کافی لوگ آسانی سے دولت مند بننے کے چکر میں ھو تےھیں چاہے کسی کو چکر دے کر ھی سہی لیکن وہ تو ان ممالک میں بھی ھوتا ھے مسئلہ یہ ھے جی جو کام ھم یھاں کرنےمیں شرم محسوس نہیں کرتے وہاں پر وہ کام کر تےھوئے ھمیں شرم آتی ھے یا کم اجرت کی وجہ سے ھم کر نھیں سکتےلیکن اس میں پاکستان کا کیا قصور ھے جی چور چکار غنڈے بد معاش تو ان ممالک میں بھی ھیں ھما رے ملک میں تھوڑے زیادہ سھی آبادی بھی ذیادہ ھے نا جی آبادی کے حساب سے غنڈے بدمعاشوں کی ضرورت جو ھوئی اگر آبادی زیادہ ھو تو ھر پیشہ کے لوگوں کی ضرورت ھوتی ھے سمجھا کریں اس میں حکومت پاکستان کا تو کوئی قصور نھیں ھےحکو مت پاکستان نے تو حکومتی کاموں کے لے بھی ایسے لوگ رکھے ھوے ھیں تو حکومت تو اچھی ھوئی جی ۔امن امان کامسئلہ تو حکو مت کاقصور تھوڑی ھے وہ عوام خراب کرتے ھیں جی غنڈے بدمعاش بھی تو عوام ھی ھیں جی۔باقی بے تکی باتیں پھر کریں گیے۔
بے تکی باتیں بے تکی باتیں Reviewed by یاسر خوامخواہ جاپانی on 10:33 PM Rating: 5

2 تبصرے:

Afzal کہا...

تنقید کریں گے مگر اس جاپانی کو بٹن کو تو اردو میں بدل دیں۔ اب اگر بلاگ شروع کیا ہے تو پھر دلجمعی سے لکھیے گا۔

پھپھے کٹنی کہا...

بھئی مجھے تو اس جاپانی اور فارسی سے سخت تکليف ہو رہی ہے اسکو ہٹا ديں نہيں تو نسوار سونگھا دوں گی

تقویت یافتہ بذریعہ Blogger.